اسلام آباد ( ویب نیو ز)وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ شہریت قانون کے بعد بھارت میں بڑی تحریک کا آغاز ہوچکا ہے، مقبوضہ کشمیر میں بھارتی قابض فوج کی جانب سے محاصرہ بھی جاری ہے، جب مقبوضہ کشمیر میں محاصرہ ختم ہوگا تو وہاں خونریزی کا خدشہ ہے۔ گزشتہ پانچ برس سے بھارت ہندو راشٹریا کی طرف بڑھ رہا ہےاور ہند وتوا بالادستی کے فسطائی نظریہ کی جانب بڑھ رہا ہے جبکہ اجتماعیت پر یقین رکھنے

والے بھارتی سراپا احتجاج ہیں۔وزیر اعظم نے کہا کہ جیسے جیسے بھارتی حکومت کے خلاف مظاہرے بڑھتے جا رہے ہیں ویسے ویسے بھارت کی جانب سے پاکستان کو دھکمیاں بڑھ رہی ہیں۔بھارتی آرمی چیف کے حالیہ بیان سے پاکستان کی تشویش میں اضافہ ہو رہا ہے جبکہ بھارتی آرمی چیف کے بیان سے “جعلی آپریشن” کے حوالے سے ہماری تشویش بڑھ رہی ہے۔ وہ بین الاقوامی برادری کو اس سے متعلق مسلسل متنبہ کر رہے ہیں کہ بھارت اپنے اندرونی حالات سے توجہ ہٹانے کے لیے “جعلی آپریشن” کر سکتا ہے جبکہ بھارت ہندو قومیت کو پروان چڑھانے کے لیے جنگی جنون میں اضافہ چاہتا ہے۔ اگر بھارت نے ایسا کیا تو پاکستان کے پاس مناسب جواب دینے کے سوا کوئی آپشن نہیں بچے گا۔