پشاور ( نصیر سلیم )خیبر پختونخوا کابینہ میں تبدیلیوں کا مسئلہ کافی پرانا چلا آ رہا ہے ، تبدیلی کی راہ میں سوا سال سے کوئی نہ کوئی رکاوٹ سامنے ا رہی تھی . مگر اب ایک ایسا معاملہ سامنے آیا ہے جس نے سب کو چونکا دینے کیساتھ ساتھ ہکا بکا بھی کر دیا ہے . ہوا کچھ یوں ہے کہ خیبرپختونخوا کے نئے وزیر تعلیم اکبر ایوب خان میٹرک پاس نکلے، ایک میڈیا گروپ کو ملنے والی دستاویز کے مطابق نئے وزیر تعلیم اکبر ایوب نے

میٹرک تک تعلیم حاصل کی ہے۔اکبر ایوب اس سے پہلے وزیر مواصلات تھے، ان کا قلمدان تبدیل کرکے اُنہیں صوبے کا وزیر تعلیم مقرر کیا گیا ہے۔واضح رہے کہ سابق مشیر تعلیم ضیاء اللّٰہ بنگش کی تعلیمی قابلیت ماسٹرز تھی، اُن کا قلمدان تبدیل کرکے انہیں آئی ٹی کا محکمہ دیا گیا۔وزیر تعلیم اکبر ایوب نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ تعلیم سے فرق نہیں پڑتا، اُنہیں پالیسی بنانی ہے، تعلیم کے شعبے میں تجربہ ہے اور ان کے پاس انتظامی امور کا بھی وسیع تجربہ ہے۔ دوسری جانب خیبر پختونخوا کے وزیر اطلاعات شوکت

یوسفزئی نے وزیر تعلیم کی حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اکبر ایوب کا انتظامی تجریہ کافی وسیع ہے۔ انہوں نے معروف ادارے سے پڑھا ہے اور ایک قابل شخص ہیں۔ اکبر ایوب خان نے پچھلی وزارت میں کافی اچھی پرفارمنس دکھائی ہے اور بڑا محکمہ چلایا ہے، اُن کے پاس صلاحیتیں تو ہیں۔یہاں واضح رہے کہ وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے کابینہ کے بعض اراکین کی کارکردگی پر عدم اطیمان کرتے ہوئے ان کے قلمدان تبدیل کئے ہیں جبکہ دو وزراء، ایک مشیر اور آٹھ معاونین خصوصی کو کابینہ میں شامل کیا گیا ہے۔