اسلام آبا د( وی او پی)سید الشہداءحضرت امام حسین ؓکے چہلم کے سلسلے میں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں مرکزی جلوس برآمد ہواجس میں ہزاروں سوگواروں نے شرکت کرکے رسول خدا کو انکے پیارے نواسے اور دیگر شہدائے کربلا کا پرسہ پیش کیا۔مرکزی جلوس کا آغاز امام بارگاہ جی سکس ٹو سے ہوا جس میں دیگر مقامات سے برآمد ہونےوالے ذوالجناح کے جلوس بھی شامل ہوگئے۔تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کی اربعین حسینی کمیٹی عزاداری سیل کے مرکزی کنوینر سید شجاعت علی بخاری ،دیگر سینئر عہدیداران اور

علمائے کرام نے خصوصی شرکت کرکے تبرکات کی زیارت کی۔ٹی این ایف جے فیدرل کیپٹل اسلام آبادکے صدرعلامہ راجہ بشار ت حسین امامی نے دوران جلوس میڈیا کے نمائندوں اورٹی این ایف جے کے عزاداری کیمپ پر عزاداروں سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پیغام حسین ؓامن کی ضمانت جسکی پیروی کرکے دہشتگردی کو جڑ سے ختم کیا جاسکتا ہے ۔انہوں نے حکومت پر زوردیا کہ وہ اتوار20صفر کوملک بھر میں چہلم شہدائے کربلا کے جلوسوں کو مکمل سیکیورٹی فراہم کرے اور ذرائع ابلاغ عاشورہ کی طرح اربعین حسینی ؓکے پروگراموں کو بھر پور کوریج دیں ۔ راہ حسےنےت ؓپر چلتے ہوئے کلمہ حق سربلند کرتے رہےں گے ۔انہوں نے واضح کیا کہ نواسہ رسول مکاتب و مسالک سے بالا ہستی ہیںاسی لئے حسین ؓسب کے اوررب کے ہیں،قائد ملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کے ضابطہ عزاداری پر عمل کرتے ہوئے مجالس عزا و ماتمی جلوسوں کا سلسلہ 8ربیع الاول تک جاری رہےگا۔۔انہوں نے کہا کہ عالمی افق پر رونما ہونے والے مسائل عروج پر ہیں ،وطن عزیز عالمی شیطانی طاقتوں کا مرکزی ٹارگٹ اورمسلم امہ کو درپیش سب سے بڑا چیلنج دہشتگردی ہے جسے جڑ سے اکھاڑنے کےلئے افواج پاکستا ن نے آپریشن ردالفساد کے ذریعے قوم کو سربلند کر دیا ہے ۔انہوں نے اہل وطن پر زور دیا کہ وہ اتفاق و اتحاد کو ہر شے پر ترجیح دیں۔ استعمارےت آمرےت دہشت گردی کا توڑ صرف حسےنےت مےں مضمر ہے۔ اسلام آباد کے مرکزی جلوس چہلم کے دوران مختارسٹوڈنٹس آرگنائزیشن اور ابراہیم اسکاﺅٹس کی جانب سے عزاداری کے استقبالیہ اور طبی امداد کی فراہمی کیلئے میڈیکل کیمپ لگائے گئے تھے۔ ایم ایف وی پاکستان اور پولیس اہلکارجلوس کے ہمراہ سیکیورٹی فرائض سرانجام دے رہے تھے۔بعدازاں جلوس چہلم براستہ لال کوارٹر میلوڈی چوک اور پولی کلینک سے ہوتا ہوا مرکزی امامبارگاہ جی سکس ٹو پہنچ کے اختتام پذیر ہوا۔