78

مستقبل کو محفوظ کہنے والے 24 ممالک میں پاکستانی سرفہرست : گیلپ سروے کی رپورٹ جاری

Spread the love

لاہور ( نیٹ نیوز ) گیلپ پاکستان کی جانب سے کیے گئے سروے میں 74 فیصد پاکستانی مستقبل سے پُرامید ہیں اور اسے محفوظ قرار دیتے ہیں۔دنیا کے 24 ممالک میں مستقبل کو محفوظ سمجھنے والوں کی مجموعی اوسط 42 فیصد ہے۔گیلپ پاکستان کے نئے سروے کے مطابق 74 فیصد پاکستانی اپنے مستقبل کے بارےمیں نہ صرف کافی پُرامید ہیں اور بلکہ اسے محفوظ سمجھتے ہیں۔پاکستانیوں میں مستقبل کو محفوظ سمجھنے کی شرح نہ صرف 24 ممالک کی عالمی اوسط یعنی 42 فیصد سے کافی بہتر ہے بلکہ دنیا کے دیگر ممالک جیسے فن لینڈ، ترکی، برطانیہ، جرمنی، جاپان، فرانس اور اٹلی سے بھی اچھی ہے۔اس بات

کا پتہ گیلپ پاکستان اور ورلڈ وائیڈ انڈیپینڈینٹ نیٹ ورک آف مارکیٹ ریسرچ کے سرویز سے چلا جس میں دنیا کے 24 ممالک کے 19 ہزار سے زائد افراد نے حصہ لیا۔پاکستان میں 500 افراد اس سروے کا حصہ بنے، پاکستان میں یہ سروے 5 سے 8 اپریل 2022 کے درمیان کیا گیا۔سروے میں 74 فیصد پاکستانی اپنے مستقبل کے بارے میں کافی پُراعتماد نظر آئے اور مستقبل کو محفوظ کہا البتہ 24 فیصد نے اسے غیر محفوظ قرار دیا ۔پاکستان کا موازنہ 24 ممالک کی مجموعی اوسط سے کیا جائے تو 42 فیصد نے مستقبل کو محفوظ تو 55 فیصد نے غیر محفوظ کہا۔مستقبل کو محفوظ کہنے والے پاکستانیوں کی شرح دنیا کے کئی ترقی یافتہ ملکوں سے بہتر نظر آئی۔فن لینڈ میں 59 فیصد ، ترکی میں 47 فیصد، برطانیہ میں 41 فیصد ، جرمنی میں 42 فیصد، جاپان میں 37 فیصد، فرانس میں 30 فیصد اور اٹلی میں صرف 29 فیصد نے مستقبل کو محفوظ کہا۔اس کے برعکس مستقبل کو غیر محفوظ سمجھنے والے ملکوں میں لبنان سرفہرست ہے جہاں 78 فیصد شہری اپنے مستقبل کو غیر محفوظ کہتے ہیں۔اٹلی میں 68 فیصد ، فرانس میں 67 فیصد ، جاپان میں 57 فیصد جبکہ جرمنی اور برطانیہ میں 55 فیصد شہری اپنے مستقبل کو غیر محفوظ سمجھتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں