سعودی عرب سمیت 6 ممالک نے امریکہ میں کیوں خرچ کی بڑی رقم؟وجوہات جانیے

Spread the love

نیو یارک ( نیٹ نیوز )سعودی عرب سمیت 6 ممالک نے امریکہ میں کيوں خرچ کی بڑی رقم؟اس کی وجوہات آپ بھی جانیے۔ گلوبل نیوز ، اورسی این این کے مطابق سعودی عرب سمیت 6 ممالک نے ٹرمپ کے ہوٹل میں 7 لاکھ ڈالر سے زائد رقم خرچ کی ہیں۔ امریکی سی این این نے اپنی ایک رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ سعودی عرب سمیت 6 ممالک نے گزشتہ برسوں میں واشنگٹن کی پالیسیوں پر اثر انداز ہونے کے مقصد سے ٹرمپ کے ہوٹل میں 7 لاکھ ڈالر سے زائد خرچ کیے ہیں۔المیادین ویب سائٹ کے مطابق امریکی نیوز

 

چینل سی این این نے اعلان کیا ہے کہ سعودی عرب، قطر اور متحدہ عرب امارات سمیت چھ بیرونی ممالک نے سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ہوٹل کو 7 لاکھ ڈالر سے زائد کی رقم ادا کی۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ واشنگٹن میں ٹرمپ آنے کے پہلے دو برسوں کے دوران ان ممالک نے پیسے خرچ کیے ہیں۔ سی این این نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ نئے حاصل شدہ دستاویزات سے ظاہر ہوتا ہے کہ ان بیرونی ممالک نے ایک بے مثال عمل کے تحت سابق امریکی صدر کے زیر کنٹرول اور مالکانہ حق والی کمپنیوں کو براہ راست ادائیگی کی ہے۔ایوان کی نگراں کمیٹی میں ڈیموکریٹس جو کچھ کہہ رہے ہیں اس کے بارے میں نئے سوالات اٹھتے ہیں کہ ان ممالک نے ٹرمپ کے دور اقتدار میں ٹرمپ کی کمپنیوں میں رقم لگا کر وائٹ ہاوس کی پالیسیوں کو متاثر کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔سی این این کی رپورٹ کے مطابق یہ چھ ممالک چین، سعودی عرب، قطر، ترکی، ملائیشیا اور متحدہ عرب امارات ہیں۔اس نیٹ ورک کے مطابق ٹرمپ ہوٹل پر ملائیشیا نے 250,000 ڈالر، قطر نے 280,000 ڈالر، سعودی عرب نے 90,000 ڈالر اور متحدہ عرب امارات نے 74,000 ڈالر سے زیادہ خرچ کئے ہیں۔

%d bloggers like this: