امریکا میں پاکستان کی زیرِ ملکیت اہم عمارت فروخت کرنے کی تیاری کر لی گئی

Spread the love

واشنگٹن( مانیٹرنگ ڈیسک ) انتہائی اہم خبر سامنے آئی ہے کہ امریکا میں پاکستان کی زیرِ ملکیت اہم عمارت فروخت کرنے کی تیاری کر لی گئی ہے.” جنگ ” کے مطابق بیچی جانے والی عمارت واشنگٹن ڈی سی کے مہنگے ترین علاقے نارتھ ویسٹ میں ہے۔بیچی جانے والی عمارت 13 ہزار سکوائر فٹ سے زائد کے احاطے پر ہے جس کے قریب سابق امریکی صدر اوباما اور سابق امریکی صدر ٹرمپ کی

بیٹی ایوانکا کے گھر بھی ہیں۔پاکستانی عمارت کے قریب دنیا کے امیرترین افراد کی فہرست میں شامل ایمیزون کے سربراہ جیف بیزوز بھی رہتے ہیں۔بیچی جانے والی عمارت میں کئی برسوں سے رہائش و دفاتر قائم نہیں ہیں، زیرِ استعمال نہ ہونے کی وجہ سے پاکستان کی ملکیت یہ عمارت انتہائی مخدوش ہے۔شہری قوانین کے مطابق عمارت کی بیرونی شکل کو تبدیل کیے بغیر مرمت ممکن ہے۔اس عمارت پر 17-2016ء میں شہری حکومت نے 70ہزار ڈالرز کا جرمانہ عائد کیا تھا ۔دوسری جانب پاکستانی سفارت خانے کی جانب سے عمارت کی فروخت کی تصدیق و تردید سے گریز کیا جا رہا ہے۔عمارت کے باہر برائے فروخت کے آویزاں کیے گئے بورڈ اچانک ہٹا لیے گئے ہیں۔
یہاں ہم آپ کو یاد کرواتے چلیں کہ رواں ماہ کے آغاز میں ہی وفاقی کابینہ نے واشنگٹن میں پاکستانی سفارتخانے کی 2 عمارات کی شفاف بڈنگ کے عمل کے ذریعے نیلام کرنے سمیت دیگر نکات کی منظوری دی تھی. اجلاس کو بتایا گیا تھا کہ پاکستان نے نیلام نہ کیا تو امریکی حکومت نیلام کردیگی،68لاکھ ڈالر کی بولی لگی ہے،3 ماہ میں مزید1 لاکھ ڈالرٹیکس بھرنا پڑے گا.

%d bloggers like this: