78

خط کا جواب سفارتی آداب کو مدِ نظر رکھ کر دیا جائیگا، قومی سلامتی کمیٹی

Spread the love

اسلام آباد ( وی او پی نیوز ) وفاقی دارالحکومت میں ہونیوالے قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کا اعلامیہ جاری کردیا گیا ہے، کمیٹی نے کہا کہ وزیر اعظم کو” دھمکی آمیز خط” کا جواب سفارتی آداب کو مدِ نظر رکھ کر دیا جائیگا۔ جاری اعلامیے کے مطابق قومی سلامتی کمیٹی کا 37واں اجلاس وزیراعظم کی زیر

صدارت ہوا، جس میں دفاع، توانائی، اطلاعات، داخلہ کے وفاقی وزراء نے شرکت کی، جبکہ خزانہ، انسانی حقوق، منصوبہ بندی و ترقی کے وفاقی وزرا ءکی بھی اجلاس میں شریک تھے۔ چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی، سروسز چیفس نے اجلاس میں شرکت کی جبکہ مشیر قومی سلامتی سمیت سینئر حکام نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔اجلاس میں قومی سلامتی کمیٹی نے غیرملکی سفارتکار کی استعمال کی گئی زبان پر تشویش کا اظہار کیا۔ قومی سلامتی کمیٹی نے اعادہ کیا کہ پاکستان کے اندرونی معاملات میں کسی بھی طرح کی مداخلت ناقابل برداشت ہے۔اعلامیے کے مطابق قومی سلامتی کمیٹی کو پاکستانی سفیر سے ایک غیر ملکی اعلیٰ عہدیدار کی باضابطہ بات چیت سے آگاہ کیا گیا۔کمیٹی نے غیرملکی اہلکار کی جانب سے استعمال کی جانے والی زبان کو غیر سفارتی قرار دیا، جبکہ اس نے کہا کہ غیرملکی مراسلہ پاکستان کے اندورنی معاملات میں کھلی مداخلت کے مترادف ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں