100

خط پبلک کیا جائے، مستعفی ہو جانا چاہیے: پی ٹی آئی سیاسی کمیٹی کی تجویز

Spread the love

اسلام آباد ( نیوز رپورٹ ) وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں تحرک انصاف کی سیاسی کمیٹی کا اجلا ہوا جس کی صدارت وزیر اعظم عمران خان نے کی . اجلاس میں تحریکِ انصاف کی سیاسی کمیٹی نے آئندہ کی حکمتِ عملی طے کر لی اور کہا ہے کہ عوام کا دباؤ ہے کہ خط کو پبلک کیا جائے، وفاق، پنجاب اور کے پی سے مستعفی ہو جانا چاہیے۔اجلاس میں پرویز خٹک، اسد عمر، فواد چوہدری، شیخ رشید، حماد اظہر، فرخ حبیب، شوکت ترین اور بابر اعوان شریک

ہوئے۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں وزیرِ اعظم نے کہا کہ اپوزیشن کی بیرونی سازش کا آلۂ کار بننے کو بے نقاب کر چکے ہیں۔ہماری حکومت گرانے کے لیے بیرونی سازش کی گئی، اپوزیشن عوام میں جانے سے گھبرا گئی ہے۔سیاسی کمیٹی نے کہا کہ ہمیں سوچ سمجھ کر فیصلہ کرنا چاہیے۔اجلاس میں اجتماعی استعفوں پر بھی مشاورت کی گئی، سیاسی کمیٹی نے مشورہ دیا کہ وفاق، پنجاب اور خیبر پختون خوا سے مستعفی ہو جانا چاہیے۔اجلاس میں موجودہ ملکی سیاسی صورتِ حال پر بھی مشاورت کی گئی۔تحریکِ انصاف نے اجلاس میں عوامی رابطہ مہم تیز کرنے اور تمام اضلاع میں جلسے کرنے کا فیصلہ کیا۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ عوام کو حکومت کے خلاف سازش سے متعلق اعتماد میں لیا جائے گا۔ذرائع نے بتایا ہے کہ اجلاس میں مبینہ مراسلے کے ذریعے کی گئی سازش کو پبلک کرنے یا نہ کرنے سے متعلق تجاویز لی گئیں۔ارکان نے مراسلے کی سیکریسی اور عدالتی حکم کی روشنی میں تجاویز دیں۔اجلاس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد پیدا ہونے والی سیاسی صورتِ حال پر تبادلۂ خیال کیا گیا۔اجلاس میں آئندہ کی حکمتِ عملی سے متعلق مختلف تجاویز پر غور کیا گیا جبکہ وزیرِ اعظم کی عوامی مہم سے متعلق بھی مشاورت کی گئی۔اجلاس میں قومی اسمبلی کے اجلاس سے متعلق مختلف امور کا بھی جائزہ لیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں