72

میں نے کوئی آئین نہیں توڑا، جو چیزیں سامنے آئیں اس کو دیکھتے ہوئے فیصلہ کیا: ڈپٹی سپیکر قاسم سوری

Spread the love

اسلام آباد ( وی او پی نیوز ) قومی اسمبلی کے ڈپٹی سپیکر قاسم سوری کا کہنا ہے کہ میں نے کوئی آئین نہیں توڑا، جو چیزیں سامنے آئیں اس کو دیکھتے ہوئے فیصلہ کیا۔جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری نے کہا کہ میں محب وطن پاکستانی ہوں، بیرون ملک سازش کے خلاف ثبوت دیکھے ہیں۔ کابینہ اور قومی سلامتی کمیٹی نے توثیق کی اس کو مدنظر رکھتے ہوئے فیصلہ کیا۔ بڑی قوتیں صرف پاکستان میں ہی نہیں باقی جگہوں پر بھی حکومت بدلنے

کا سوچ رہی ہیں، حکومت نے کمیشن بنایا ہے، غیرملکی ایجنڈے کے تحت حکومتیں بدلیں تو ایک محب وطن پاکستانی کیا قدم اٹھائے۔ڈپٹی سپیکر نے کہا کہ جنہوں نے مارشل لاء لگایا انہوں نے غلط کیا، ہماری جمہوری حکومت ہے، عوام تحریک انصاف اور عمران خان کے ساتھ ہے، عوام کو پتا ہے سازش ہورہی ہے۔قاسم سوری کا کہنا تھا کہ بیرونی آقاؤں کی غلامی کرتے ہوئے حکومت بدلنے کی کوشش کی جارہی ہے، میں نے پاکستان کی خاطر رولنگ دی، ساری زندگی اس پر فخر کروں گا۔قاسم سوری نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے سے مایوسی ہوئی، عدالت آرٹیکل 5 اور میری رولنگ کی طرف گئی ہی نہیں، اگر اعلیٰ عدالیہ کے ججز خط دیکھتے تو وہ بھی یہ ہی فیصلہ کرتے۔خیال رہے کہ قاسم سوری نے 3 اپریل کو وزیراعظم کیخلاف تحریک عدم اعتماد مسترد کرنے کی رولنگ دی تھی۔سپریم کورٹ آف پاکستان نے ڈپٹی سپیکر کی رولنگ کو غیر آئینی قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ قاسم سوری نے دانستہ طور پر آئین کو سبوتاژ کیا، اُن کا اقدام آرٹیکل 6 کے زمرے میں آتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں