70

اور اب عمران خان کا صدر مملکت اور چیف جسٹس کو خط

Spread the love

اسلام آباد ( نیوز ڈیسک ) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نےامریکی دھمکی پر پاکستانی سفیر کے مراسلے کی تحقیقات کے لیے صدرِ مملکت و افواجِ پاکستان کے کمانڈر ان چیف ڈاکٹر عارف علوی کو خط لکھ کر فوری کارروائی کی سفارش کردی۔ عمران خان نے چیف جسٹس آف پاکستان کو بھی الگ خط تحریر کر دیااور اس خط کی عوامی تحقیقات کی استدعا کی۔عمران خان نے کہا کہ صدرِ مملکت اور چیف جسٹس سے گزارش ہے کہ عوام کی امیدوں پر پورا اتریں، عوام حصولِ انصاف کیلئے عدالتِ عظمیٰ و سربراہِ ریاست کی جانب نظریں لگائے ہوئے ہیں، ووٹ کی پرچی سے 5 سالہ حکومت منتخب کرنے کے اپنے جمہوری حق پر بیرونی سازش کی شکل میں پڑنے والے ڈاکے پر عوام سراپا احتجاج ہیں، ایوانِ صدر اور عدالتِ عظمیٰ کی جانب سے معاملے پر خاموشی سے عوام میں شدید

مایوسی پھیل رہی ہے۔” ایکسپریس نیوز ” کے مطابق چیئرمین پاکستان تحریک انصاف نے کہا کہ یہ ایک نہایت سنجیدہ نوعیت کا معاملہ ہے، اس کے نتیجے میں میری حکومت کو سازش پر مبنی تحریک عدمِ اعتماد کے ذریعے چلتا کیا گیا، اس سازش کا مقصد مجھے وزارتِ عظمیٰ سے ہٹانا تھا، آخری کابینہ اجلاس میں تحریک انصاف کی حکومت اس نتیجےپر پہنچی کہ مراسلےکےمندرجات میں سازش کے آثار نمایاں ہیں۔ خفیہ مراسلے کی رپورٹ میں امریکی انڈر سیکرٹری آف سٹیٹ کی گفتگو واضح طور پر بیان کی گئی ہے، پاکستانی سفیر کیجانب سے اس ملاقات سے متعلق بھجوائی گئی تمام تفصیلات ایک خفیہ مراسلے کی شکل میں آپکے پاس موجود ہیں، امریکی اسٹنٹ سیکرٹری آف اسٹیٹ نے دیگر حکام کے ہمراہ ہمارے سفیر سے باضابطہ ملاقات کی۔عمران خان کا کہنا تھا کہ عوام سچ جاننا اور تبدیلی اقتدار کی بیرونی سازش میں ملوث کرداروں کے بارے میں جاننا چاہتے ہیں، عدالتِ عظمیٰ سازش کے کرداروں کے تعین کیلئے کمیشن دے جو کھلے عام معاملے کی تحقیقات کرے، عدالتِ عظمیٰ کیلئے میموگیٹ کی نظیر موجود ہے، لازم ہے کہ چیف جسٹس مراسلے کے بیرونی سازش پر مشتمل مندرجات کا جائزہ لیں۔خفیہ مراسلے میں درج اس سازش کےباعث ڈپٹی اسپیکر نےمعاملے کی مکمل تحقیقات تک تحریک عدمِ اعتماد پر کارروائی آگے بڑھانے کی اجازت نہ دی، اس تحریک عدمِ اعتماد پر رائے شماری سے قبل کیا عدالتِ عظمیٰ کو مراسلے کے مندرجات کا جائزہ نہیں لینا چاہئے تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں